پاکستانیوں پاکستان کی اہمیت کو سمجھو ایسا دیس اور کوی نھیں ھو سکتا۔

Abdul Shakoor July 4, 2018 71 No Comments

image

🇵🇰⛰🌱🌨🇵🇰⛰🌱🌨🇵🇰⛰🌱🌨🇵🇰

پاکستان ۔۔۔۔
فلک بوس پہاڑوں
اور
پر عزم نوجوانوں کی سرزمین

میں نے تو ڈیڈ سے کہہ دیا ہے اے لیول کے رزلٹ کے بعد مجھے تو ہائیر ایجوکیشن کے لیے انگلینڈ بجھوا دیں یا پھر کینڈا۔۔۔۔
یہ ارسلان تھا نہایت نخوت سے بولتا وہ اپنے ساتھیو پر خوب رعب جھاڑ رہا تھا وہ سب اپنے مشترکہ دوست دانیال کے گھر موجود تھے جس نے انہیں کوئی خوشخبری سنانے کے لیے بلایا تھا۔ اس وقت دانیال ڈرائنگ روم میں ان کے ساتھ موجود نہیں تھا۔ سب دوست اس سے خوشخبری سننے کے لیے بےتاب تھے لیکن ہمیشہ کی طرح ارسلان نے یکطرفہ طور پر بولنا شروع کر دیا تھا۔
کون سا مسلہ ہے جو اس ملک میں نہیں ہے۔ کسی کو مالی پریشانی ہے تو کوئی ملک کے حالات سے پریشان ہے تو کوئی صحت کے مسائل سے دوچار ہے۔ پانی کی قلت، صفائی کا فقدان، بے روزگاری، دہشت گردی ، فرقہ واریت۔۔ لگتا ہے تمام دنیا کے کے مسائل کا گھر پاکستان ہی ہے۔

تم لوگ بھی سوچو کہیں باہر جانے کا۔۔
شہریار نے بےچینی سے پہلو بدلا۔۔
خیر ایسی بھی کوئی بات نہیں۔ شہریار ارسلان کو کچھ جواب دینا چاہ رہا تھا کہ دانیال مٹھائی لیے ڈرائنگ روم میں داخل ہوا۔۔
دوستو!!
یہ لو منہ میٹھا کرو۔۔۔
خوشی کی خبر سناتا ہوں تم سب کو۔۔
سب نے بےتکلفی سے مٹھائی کی جانب ہاتھ بڑھاتے خوشخبری سنائی جائے کا نعرہ لگایا۔

سنو دوستو!!

گلف نیوز میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق برطانوی تنظیم برٹش بیک پیپرز سوسائٹی نے سیاحت کے لیے پاکستان کو سب سے بہترین اور سب سے زیادہ دوستانہ ملک قرار دیا ہے جہاں کے پہاڑ اور خوبصورت مناظر کسی کے بھی حلقہ خیال میں نہیں آسکتے۔

برٹش بیک پیپرز سوسائٹی نے اپنی فہرست جاری کرتے ہوئے 20 ایسے ممالک جانے کی تجویز دی ہے جہاں لوگوں کو سال 2018ء میں سیاحت کے لیے جانا چاہیے ان میں پاکستان سرِفہرست ہے ۔

سوسائٹی نے اپنے فیس بک پیج پر لاہوراور ہنزہ کے ہن پاس اور لیڈی فنگر پارک کی تصاویر بھی جاری کی ہیں۔

سوسائٹی کے اراکین نے 101 ممالک کا دورہ کیا ہے اور اس کے بعد یہ فہرست جاری کی ہے، پاکستان کو پہلا نمبر دینے کی وضاحت کرتے ہوئے برٹش بیک پیپرز سوسائٹی نے کہا ہے کہ یہاں کے لوگ پوری زمین پر سب سے زیادہ دوستانہ برتاؤ کرتے ہیں اور انتہائی شفیق ہیں، لوگ سیاحوں کو گھر پر بلاتے ہیں، کھانا کھلاتے ہیں اور سیلفیاں بھی لیتے ہیں، پاکستان کی ہر ادا دیکھ آپ کو اس ملک کے بارے میں اپنا تاثر بدلنے پر مجبور ہوجائیں گے یوں بہترین ممالک کی فہرست میں پاکستان واضح طور پر سب سے آگے ہے۔

سوسائٹی کے چند ارکان نے اپنے فیس بک پیج پر قراقرم ہائی وے کو دنیا کا سب سے خوبصورت اور ناقابلِ فراموش مقام قرار دیا ہے۔ برٹش بیک پیپرز سوسائٹی کے دو اراکین سیموئیل جانسن اور ایڈم سلوپر نے کہا ہے کہ پاکستان کا حسن اور لوگوں کی محبت آپ کا دل پگھلانے کے لیے کافی ہے۔یہ دونوں 2016ء کے موسمِ گرما میں پاکستان آئے تھے اور کاغان، ناران، گلگت، قراقرم سمیت لاہور اور اسلام آباد کا سفر طے کیا تھا۔*

انہوں نے برطانوی کوہ پیما کا پاکستان کے ہن پاس کے بارے میں ایک تبصرہ بھی نقل کیا ہے جس میں ایرک شپٹن نے کہا تھا کہ اگر آپ کو پہاڑوں کے حسن کا نظارہ کرنا ہوتو پاکستان دنیا کا سب سے بہترین مقام ہے۔
خوشی سے تمتماتا چہرہ لیے دانیال جوش سے ان سب کو یہ خبر سنا رہا تھا۔
ارے واہ۔۔ سب نے اپنی خوشی کا اظہار کیا۔۔۔
سنا تم نے ارسلان ۔۔۔ ہمارا وطن دنیا کا سب سے پیارا وطن ہے اور یہاں کے لوگ دنیا کے سب سے زیادہ امن دوست اور محبت دوست لوگ ہیں۔

بالکل شہریار ۔۔ یہ دیکھو میرے پاس ایک ڈاکومینٹری ہے پاکستان۔۔۔ پہاڑوں کی سرزمین۔۔

احتشام نے جیب سے اپنا سیل فون نکالا جسے دانیال نے دیوار گیر سکرین کے ساتھ منسلک کر دیا۔ وہ سب دیکھنے لگے۔

مسحور کن مناظر کے پس منظر سے ابھرتی متاثر کن آواز۔۔ سکرین پر پاکستان کے فلک بوس پہاڑ دکھائے جا رہے تھے۔

دنیا میں 8 ہزار میٹر سے بلند صرف چودہ چوٹیاں ہیں، جن میں سے پانچ پاک سرزمین کا حصہ ہیں۔ جن میں کے ٹو، نانگا پربت، گاشر برم ون، بروڈ پیک اور گاشر برم ٹو شامل ہیں، جبکہ سات ہزار میٹر سے بلند چوٹیوں کی تعداد 108 ہے، جن میں سے پانچ ٹاپ ٹین بلند چوٹیاں پاکستانی چوٹیوں کا حصہ ہیں۔

کے ٹو
کے ٹو جسے ‘ماﺅنٹ گڈون آسٹن اور شاہ گوری’ بھی کہا جاتا ہے، پاکستان کی سب سے بلند جبکہ ماﺅنٹ ایورسٹ کے بعد پاکستان کی دوسری بلند ترین چوٹی ہے جس کی بلندی 8611 میٹر ہے اور یہ سلسلہ کوہِ قراقرم میں واقع ہے، اسے دو اطالوی کوہ پیماﺅں نے 31 جولائی 1954 کو سب سے پہلے سر کیا تھا۔

کے ٹو کو ماﺅنٹ ایورسٹ کے مقابلے میں زیادہ مشکل اور خطرناک سمجھا جاتا ہے، کے ٹو پر 246 افراد چڑھ چکے ہیں جبکہ ماﺅنٹ ایورسٹ پر 2238 ۔
نانگا پربت
نانگا پربت دنیا کی نویں اور پاکستان کی دوسری سب سے اونچی چوٹی ہے، اس کی اونچائی 8125 میٹر ہے اور اسے دنیا کا ‘قاتل پہاڑ’ بھی کہا جاتا ہے۔ اس پر چڑھنے میں اب تک سب سے زیادہ کوہ پیما مارے گئے ہیں اسے ایک جرمن آسٹرین ہرمن بہل نے سب سے پہلے 3 جولائی 1953 میں سر کیا تھا۔

فیری میڈو یا پریوں کا میدان نانگا پربت کو دیکھنے کی سب سے خوبصورت جگہ ہے، اس جگہ کو یہ نام 1932 کی جرمن امریکی مہم کے سربراہ ولی مرکل نے دیا۔ سیاحوں کی اکثریت فیری میڈو آتی ہے یہ 3300 میٹر بلند ہے۔
کہا جاتا ہے کہ اس پہاڑ کو دیکھنے سے خوبصورتی سے زیادہ ہیبت انسان کے دل پر اثر کرتی ہے۔

گاشر برم ون
گاشر برم ون پاکستان کی تیسری اور دنیا کی گیارہویں سب سے اونچی چوٹی ہے، اسے کے فائیو اور چھپی چوٹی کے ساتھ بلتی زبان میں ‘خوبصورت پہاڑ’ بھی کہتے ہیں۔ یہ پاکستان کے شمال میں سلسلہ کوہ قراقرم میں واقع ہے اور اس کی بلندی 8080 میٹر ہے۔

گاشر برم ون کو سب سے پہلے 5 جولائی 1958 میں دو امریکیوں پیٹ شوننگ اور اینڈی کافمان نے سر کیا۔

بروڈ پیک
بروڈ پیک دنیا کی 12 ویں اور پاکستان کی چوتھی سب سے اونچی چوٹی ہے، یہ قراقرم کے سلسلے میں پاکستان اور چین کی سرحد پر واقع ہے اور ا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *