طاھر الفراڈری ماڈل ٹاؤن کے مقتولین کی ھڈیاں بیچ کے کھا چکا ھے

Abdul Shakoor June 19, 2018 289 No Comments

image

ماڈل ٹاون کیس کا کیا بنا وہ الفراڈری کے بریف کیس کا شکار ھوگیا۔ ماڈل ٹاؤن میں قتل ھونے والے 14 مقتولین اور سو سے زیادہ زخمیوں کی کوئ بات نھیں سنتا کیونکہ علامہ طاھر الفراڈری اس کیس کو کئ بار کیش کرچکا ھے۔

آج سے دو سال پہلے جب رانا ثناءاللہ زعیم قادری نے مقتولین کے ورثا کو افر دینے پہ بولا تھا کہ کتنے پیسے چاہئے لے لو خاموش ھوجاو میں نے بولا تھا مقتولین کے ورثا کو یہ بہت اچھی پیشکش ھے اس کو ھاتھ سے نہ جانے دو ان الفراڈری کے غلاموں نے بولا جو الفراڈری کرے ھم ان کے ساتھ ھیں۔ ان کے پیچھے ھیں۔ الفراڈری نے پھر سہی سے اس کیس کو کیش کیا چودھری بھی بن گیا مال بھی کما گیا۔

آپ مقتولین کے ورثا چار سال سے خوار ھورھے ھیں اور الفراڈری چنگی بھلی دیہاڑی لگا گیا۔دراصل اس جاھل عوام کو سیاست دانوں مولبیوں اور پیروں نے سہی بندر والا تماشا لگایا ھوا۔اس عوام کو جو سہی بےوقوف بنائے وہ ان کو اچھا اور سچا لگتا ھے۔

اب وقت ھے طاھر الفراڈری کو ماڈل ٹاؤن کے مقتولین کے لئے دھرنا دے روڈ بلاک کرے پہیہ جام ہڑتال کرے کیونکہ اب نواز شریف اور شہباز شریف کا سورج غروب ھو چکا ھے۔

مگر علامہ طاھر الفراڈری اس کیس کو کیش کر چکا ھے دھرنا دے گا مریم اس کو معاف نھیں کرے گی۔میں چاچا عبدالشکور اجمل علامہ طاھر الفراڈری کو کیئ بار بول چکا ھوں کہ تیرے 7 ملین فالورز ھیں اس کا دس فیصد بھی لے جا کر لاھور ھائ کورٹ کے صدر دروازے پہ بٹھا دو سارا کام ھوجائے گا۔معلوم ھے سات ملین کا دس فیصد سات لاکھ ھوتا ھے دس فیصد زیادہ ھے تو پانچ فیصد ہی لے جاکر لاھور ھائ کورٹ کے صدر دروازے پہ بٹھا دو سارا مسلہ حل ھو جائے گا۔

سات ملین کا کا پانچ فیصد ساڑھے تین لاکھ بنتا ھے۔

پر علامہ طاھر الفراڈری ایسا کچھ نھیں کرے گا کیونکہ علامہ طاھر الفراڈری ماڈل ٹاؤن کے مقتولین کی ھڈیاں بیچ کے کھا چکا ھے۔ بلکہ اپنا ضمیر اور غیرت بھی بیچ چکا ھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *