غریب عوام کی بیٹیاں اور نواز شریف زرداری کی بیٹیاں کیسے سانجھی ھو سکتی ھیں؟

Abdul Shakoor June 19, 2018 246 No Comments

image

جو لوگ چاچا عبدالشکور اجمل کو بولتے ھیں کہ بیٹیاں سب کی سانجھی ھوتی ھیں ان کو جواب۔جناب یا تو نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں ایسے ہی قالین ببایئں جیسے چاچا کی بیٹیاں قالین بناتی ھیں فر نواز شریف اور زرادری کی بیٹیاں اور چاچا عبدالشکور اجمل کی بیٹیاں سانجھی ھیں۔

 

یا نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں بھی ایسے ہی جون جولائی میں اپنا ایک سال کا بچہ اپنی کمر پہ باندھ کر سڑک پہ کولتار پہ بجری ڈالیں جیسے چاچا کی بیٹیاں ڈالتی ھیں اور شام کو جاتے وقت ٹھیکدار اور منشی کی ھوس بھری نظروں کا سامنا کرتی ھیں پھر نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں اور چاچا عبدالشکور اجمل کی بیٹیاں سانجھی ھیں۔

 

یا فر نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں بھی چنگچی والے کی سواریاں پوری ھونے کے بعد چنگچی کے ڈرایئور کے ساتھ چپک کے بیٹھیں جیسے غریب کی بیٹیاں بیٹھتی ھیں پھر نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں اور چاچا عبدالشکور اجمل کی بیٹیاں سانجھی ھیں۔

 

یا فر نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں بھی بھٹہ خشت پہ 24 گھنٹے گارے سے اینٹیں بنائیں اینٹوں کو سکھانے کے لیے اس کو پلٹیاں لگائیں جیسے ایک غریب کی بچیاں کرتی ھیں پھر نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں اور چاچا عبدالشکور اجمل کی بیٹیاں سانجھی ھیں۔

 

یا تو نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں بھی فیکٹریوں میں ملازمت کریں فیکٹری کے مالک اور فورمین کی گندی مندی نظروں کا سامنا کریں جیسے ایک غریب کی بیٹی کو ھر کرب سے گزرنا پڑتا ھے تو نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں اور چاچا عبدالشکور اجمل بیٹیاں سانجھی ھیں ۔

 

یا تو نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں بھی کوہستان بس سروس فیصل آباد میں بس ھوسٹس کی نوکری کریں ان کو بھی کسی غلیظ سیکیورٹی گارڈ کی گندی مندی نظروں کا سامنا کرنا پڑے اور مزاحمت کرنے پہ جان سے ھاتھ دھونا پڑے پھر نواز شریف اور زرداری کی بیٹیاں اور چاچا عبدالشکور اجمل بیٹیاں سانجھی ھیں۔

 

چاچا تو پھر بھی نواز شریف اور زرداری کی بیٹیوں کو بیٹیاں سمجھتا ھے۔اللہ کرے کسی کی بیٹی کی زندگی میں غم نہ ائے۔پر جب تک کوئ ھماری بیٹی کو بیٹی نہ سمجھے جو مراعات سہولیات اور جان کی امان نواز شریف اور شہباز زرداری کی بیٹیوں کو ھے اگر میری بیٹیوں مطلب ٹیکس دینے والے غریب کی بیٹی کو نھیں میں تو ان ظالموں کی ماں بہن بیٹی کو سانجھی نھیں سمجھتا تم سمجھ لو۔

 

جب تک غریب کی بیٹی ماں بہن کو عزت نہ دی جائے گی انشاءاللہ چاچا کا مشن جاری رھے گا۔اور ھاں مریم کی ماں کلثوم بی مار نھیں یہ سب ڈرامہ بازی ھے۔عوامی ھمدردی اور انتخابی مہم کو چلانے کی ڈرامہ بازی ھے اور ڈرامے باز عورتیں چاچا عبدالشکور اجمل کی سانجھی نھیں ھوتیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *